"Welcome to Pakistan Institute of Fashion and Design"
" Welcome to Pakistan Institute of Fashion and Design "
Foundation YearsSchool of Fashion DesignSchool of Fashion Marketing & PromotionSchool of Textile Design
The selected candidates, on the basis of Entry Test and Interview, are admitted provisionally. The Verification Committee confirms admission after the verification of educational and other required documents.
  1. Students are required to get their registration number at the beginning of first academic year after payment of dues from Registrar’s office.
  2. Students are allocated registration number section wise before the commencement of classes. Registration numbers and section once allocated are not changed.
  3. If (at any stage after the admission) it comes to the knowledge of the authorities that the documents presented by the applicant are fake or there is a misstatement or clerical error in the document, his/ her admission will be cancelled.
  4. Provisional admission may be granted to the result awaiting students. PIFD reserves the right to cancel admission of such students who fail to provide result intimation and Equivalence Certificate issued by IBCC within given time in the undertaking furnished at the time of payment of dues.
  5. Student enrolled at PIFD in undergraduate program is not allowed to be enrolled in any other program in any other University at the same time. If such situation arises, the registration of student will be cancelled or he/she will be expelled.
  6. Migration from any HEC recognized Institution/University may be allowed after successful completion of Foundation Year Studies only on the following grounds.

    1. Transfer of Parents
    2. Shifting of residence of parents
    3. Any other un-avoidable circumstances
    4. Availability of vacant seat
    5. Grades/GPA acceptable to the Department Concerned
    6. Intermediate or equivalent marks should be 550
  • Admission on Merit: All the admissions of eligible applicants shall be made on open interse-merit determined on the basis of entry test and interview
  • Foreign Seats: Four Seats are reserved for foreign students for Bachelor Degree Program. They will be selected on inter-se-merit and shall pay additional fee as fixed by the Federal Government for foreign students per annum along with normal fee for year I, II, III, IV (Semester-wise) separately.
  • The institute shall admit students in Four-Year Degree programs according to the schedule advertised in the leading national newspapers, and on the website of the institute.
  • The Institute shall not accept any admission form after the due date fixed for the purpose.
  • Quota System
Punjab including Federal Area of Islamabad
45%
Sindh including Karachi
20%
Baluchistan
16%
Khyber Pakhtunkhwa
9%
FATA
5%
Gilgit Baltistan
3%
Azad Jammu & Kashmir
2%
Eligibility:
  • Intermediate/A-Level with 50% (550/1100) marks.
  • Students awaiting results are also eligible for provisional admission.
  • F.A/F.Sc. students should attach the attested copy of Part-I Result Card and Part-II Roll No. Slip of their respective Boards.
  • A-Level with (Minimum 3 main subjects, no subsidiary) and O-Level with 8 subjects including five compulsory subjects are required.
  • O-Level students are required to submit Equivalence certificates issued by IBCC along with ALevel Result intimation of at least two main subjects with the form.
  • Result awaiting A-Level students should attach their Statement of Entry.
  • Applicants will have to appear in compulsory pre-admission Aptitude Test (Entry Test) followed by an interview.
  • Merit List will be prepared on the basis of Entry Test and Interview and be displayed for studying in 1st semester of Foundation Year
The scale of fees and other charges are notified by the Institute every year. A detailed break- up of the fee is as follows:
Semester I
Admission /Registration Fee
10,000
Security Deposits (Refundable)
10,000
Tuition Fee
102,292
Medical Fee (Per Semester)
1,000
Others (Library &Workshop Fee)
2,000
Examination Fee (Per Semester)
1,000
Semester II, III, IV, V, VI, VII, VIII
Tuition Fee
102,292
Medical Fee (Per Semester)
1,000
Others (Library &Workshop Fee)
2,000
Examination Fee
1,000
* Adjustable Withholding Tax on Total Fee would be charged as per Government Rules.
Hostel Charges inclusive of Transport
Hostel Security (Refundable)
2,000
Hostel Accommodation Charges (Non AC) per month
8,000
Hostel Accommodation Charges (AC) per month
14,000
Hostel Mess Charges per month (To be deposited to the Cashier, PIFD)
45,00
Transport (Day Scholars)
Transport Charges per month
5,000
The total fee of one semester may be divided into three installments for student’s convenience in exceptional cases.
The students have the ultimate responsibility for arranging Institute fees/dues. The Institute may require a declaration or affidavit from the students and their guardians/parents or sponsors guaranteeing payment before confirming admission or at any time during the course.
Fee must be paid within the time mentioned on challan form. Late fee fine shall be charged at Rs. 100/- per day subject to maximum of Rs. 5000/- per each semester separately. Students who fail to pay their fee in the stipulated time will not be allowed to sit in the classes after due date and will not be allowed to appear in their mid-term and final-term examinations. Such students may be asked to re-register themselves to enroll at PIFD after payment of registration fee as prescribed.
Refund of Fee Policy
PIFD has implemented the National Level Fee Refund Policy at Higher Education Institutions of Pakistan circulated by Higher Education Commission, vide letter No. 10-1/HEC/A&C/2012/94 dated 11th September, 2012 for registered students and also adopted revised policy of HEC vide letter No.10- 1/HEC/A&C/2015/6542 dated Dec 7, 2015.
Percentage (%) of Tuition Fee
Timeline For Semester/Trimester System
Full (100%) Fee Refund
5,00UP to 7th day of commencement of classes
Half (50%)Fee Refund
From 8th -15th day of commencement of classes
No Fee (0%) Refund
From 16th day of commencement of classes
  • %age of Fee shall be applicable on all components of fee, except for security and admission charges.
  • Timeline shall be calculated continuously, covering both weekdays and weekend.
From 16th day of commencement of classes, if a student at any stage intends to quit his/her studies, he/she may apply for refund of security fee only.
The students who apply for refund of fee due to cancellation of admission or otherwise before the commencement of classes may get the full refund as per receipt.
It is mandatory for the candidates to pay full fee of the first Semester within due date as financial assistance is not provided in the first Semester.
Students and their families may experience financial difficulties. Therefore, it is crucial that expenditure over the academic year is planned in advance. It is our endeavor to provide access to the quality education. Hence the Institute has a limited range of bursaries to support those students who come from lower income families.
The Institute grants financial assistance on the basis of demonstrated financial need, from 2nd semester onwards to deserving students. There are no academic, athletic or merit-based awards. “Financial Assistance” will be for one semester and this fee waiver/concession is applicable only on the tuition fee. A student will pay all other payments and fines in whole and no exemption will be granted. Financial Assistance Half Tuition Fee is granted on kinship basis to the younger real brother or sister.
How to Apply
Students are required to submit an application when announced. The application form must be properly filled and attached with the required documents such as income, expenditure and tax return etc. The financial assistance forms are available at the Course Coordinator’s Office of each department. Due date for the submission of financial assistance application is notified on notice boards. Late submissions are not entertained.
Application Review
Financial assistance cases are reviewed by a committee duly constituted. Based upon the information submitted in the application, the committee assesses the “survival need” of the student. Incomplete applications are refused.
Funding from Other Sources
There are a number of external sources of funding (grants and loans), which students may access. In such cases, the Institute will assist in any way it can; full information is only available directly from the sources concerned. The student’s eligibility is a matter between the student and the concerned source.
Financial Assistance Disbursement
Financial Assistance is automatically adjusted by the PIFD accounts office against tuition fee if the applications is approved. No amount is disbursed directly to the student.
HEC Need Based Scholarship:
Introduction
Higher Education Commission aims to elevate the socio-economic position of needy & deserving students by providing access to quality education through needs-based scholarships. Government of Pakistan has also duly acknowledged the financial constraints barring students from acquiring higher education and has thus earmarked substantial funds for improvement of education sector.
Objectives
  • To provide an opportunity for talented students who are financially disadvantaged and are incapable of meeting higher education costs at partner institutions /universities in all disciplines.
  • To provide opportunities for academically qualified, yet financially needy, Pakistani students to continue university studies in selected partner universities of Pakistan, especially from remote and rural areas of Pakistan (FATA, KPK, Southern Punjab, Balochistan, and Northern Sindh).
Eligibility Criteria
  • Financial assistance & scholarships are available for study at Undergraduate and Graduate level in all disciplines at HEC selected public sector Pakistani universities and degree awarding institutions.
  • Students need to compete for securing admission at the participating institution as per admission policy of the institution and be enrolled in Undergraduate (4 years) or 2 years MA/MSc programs.
  • The eligibility of a candidate is linked to his/her financial needs as assessed by the Institutional Scholarship Award Committee. The financial background of the family of the applicant will be kept in view in this regard.
  • The number of Graduate and Undergraduate slots will be decided by the universities but weightage will be given to Undergraduate slots.
  • Funding for Graduate and Undergraduate slots will continue for the complete duration of the program. In case any students drop out, they will be replaced by other candidates on the waiting list.
  • All disciplines will be kept open. The selected university will decide whether to include or exclude any discipline keeping in view its grant, program cost, and number of allocated slots, etc.
  • In the case of Medicine, Pharm-D and other five year programs, funding will be made available for the complete program.
  • Considering the allocated grant, the university may adjust the total number of scholarships to an extent in order to cover the tuition fees.
  • In addition to the tuition fee, every grantee will be paid Rs. 6000 stipend per month for the complete program.
Note:
The complete application should be sent to relevant Financial Aid Offices where the applicant intends to secure admission.
Punjab Education Endowment Funds (PEEF)
Punjab Education Endowment Funds (PEEF) has awarded 10 scholarships to meritorious and deserving students for the graduation degree course every year for Foundation Year Studies Students.
The Fund will be offered to the students meeting the following criteria:-
  • Students must have domicile of the Punjab Province
  • Students must have secured at least 60% marks (first division) in their Intermediate Annual Examination and must have enrolled in the Undergraduate Level Design Education Professional degree program in the same year as they have passed such Examination from any Board of Intermediate and Secondary Education of Punjab or the Federal Board of Intermediate and Secondary Education.
  • Students must have passed the above mentioned examination from;
    a. A government institution (students of Federal Government Institutions situated within geographical boundaries of Punjab are eligible)
    b. A private affiliated institution
    c. As a private candidate.
  • The annual household Parent’s income of each of the student must not be more than Rs. 360,000/- (Rupees Three Hundred & Sixty Thousand Only).
  • The student must also qualify under the criteria for award of financial aid prescribed by the institution
Student Identity Card
The Student Identity Card is the student’s passport to the Institute premises. The students must wear it in the classes, the library, studios, workshops and computer room; it provides proof of enrolment at the Institute. Students are required to keep it handy and show it on demand. In case of loss, a duplicate card may be provided on payment of prescribed fee.
The Student Identity Card is valid for four year academic session and must be returned to the Course Coordinator on completion of the session or completion of the course to enable the refund of library and Institute security deposits.
Dress Code
All the students must adhere to the ‘Dress Code’ within the Institute. Failure to comply may result in the imposition of certain fine or direction to leave the PIFD premises.
Dress Code for female students is mentioned below:
  • Knee length Kameez /short or long sleeve,Shalwar and Dopata /Scarf.
  • Trousers/Jeans/Pants with knee length Shirt/short or long sleeve and Dopata/Scarf.
  • Girls are not allowed to wear sleeveless dresses, fitted t-shirts, caprie, short tops.
Male students must be in presentable dress. Short trousers, night suits and slippers are not allowed.
داخلہ امتحان اور انٹرويو کی بنياد پرمنتخب اميدواران کو عارضی داخلہ ديا جاتا ہے۔ ويری فی کيشن کميٹی تمام اسناد اور ضروری دستاويزات کی تصديق کے بعد داخلہ کی تصديق کرتی ہے۔
  1. طلبا کے لئے ضروری ہے کہ وه ابتدائی تعليمی سال ميں ، واجبات کی ادائيگی کے بعد رجسٹرار دفتر سے اپنا اندراج نمبر حاصل کرليں ۔
  2. کلاسز کے آغاذ سے پہلے ہی طلبا کو سيکشن کے مطابق اندراج نمبر جاری کر دئے جاتے ہيں۔ ايک دفعہ جاری اندراج نمبر اور سيکشن تبديل نہيں ہوسکتے۔
  3. داخلہ کے بعد کسی بهی مرحلے پر اگر انتظاميہ کی علم ميں يہ بات آجائے کہ درخواست گزار کی جانب سے جمع کروائے گئے دستاويزات جعلی ہيں يا اس ميں کوئی غلط تحرير ہے يا کوئی دفتری غلطی ہے اس کا داخلہ منسوخ کرديا جائے گا۔
  4. نتيجہ کے منتظر طلباء کو عارضی داخلہ ديا جا سکتا ہے۔ پی آئی ايف ڈی کے پاس يہ حق محفوظ ہے کہ وه ان طلبا کا داخلہ منسوخ کرديں جوحسب وعده واجبات کی ادائيگی سے پہلےمقرره وقت ميں امتحان کا نتيجہ اور آئی بی سی سی سے جاری کرده ايکويلينس سرٹيفيکيٹ جمع نہ کرواسکيں۔
  5. وه طلبا جن کا نام پی آئی ايف ڈی ميں انڈر گريجويٹ پروگرام ميں درج ہے وه ايک ہی وقت ميں کسی دوسری يونيورسٹی کے کسی اور پروگرام ميں داخلہ نہيں لے سکتے۔ اگر ايسی صورت حال سامنے آئی، تو ايسے طالب علم کا داخلہ منسوخ کرديا جائے گا يا اسے يہاں سے خارج کرديا جائے گا۔
  6. صرف درج ذيل صورتوں ميں کسی اور ايچ ای سی سے منظور شده يونيورسٹی / اداره سے ابتدائی تعليمی سال کی تکميل کے بعد طالب علم کی يہاں منتقلی ہوسکتی ہے ۔
    1.  والدين کا تبادلہ
    2.  والدين کی رہائش کی منتقلی
    3.  ديگر ناگزير وجوہات
    4.  خالی جگہ کی دستيابی
    5.  متعلقہ شعبہ کو قابل قبول گريڈز/جی پی اے
    6.  اوسط يا برابر نمبرز 550 ہونے چاہئے۔
  • اہليت کی بنياد پر داخلہ: تمام اہل درخواست گزاروں کو انٹرويو اور داخلہ ٹيسٹ ميں پہلے سے مقرر کرده معيار پر پورا اترنے پر داخلہ ديا جائے گا۔
  • غير ملکی طلبا : بيچلر ڈگری پروگرام ميں غير ملکی طلبا کے لئے چار سيٹس مخصوص کی گئی ہيں۔ انکا انتخاب طے شده معيار کی بنياد پر کيا جائے گا اور انہيں حکومت پاکستان کی طرف سے مقرر کرده اضافی فيس ہمراه نارمل فيس ہرسال کے لئے الگ اور سمسٹر کے مطابق ادا کرنی ہوگی۔
  • اداره طلبا کو 4 سالہ ڈگری پروگرام ميں ملک کے نامور اخباروں اور ادارے کی ويب سائٹ ميں تشہير کرده شيڈول کے مطابق داخلہ دے گا۔
  • اس مقصد کے لئے اعلان کرده تاريخ کے بعد کوئی داخلہ فارم وصول نہيں کيا جائے گا۔
  • کوٹہ سسٹم
45%
پنجاب بمعہ اسلام آباد کےوفاقی علاقے
20%
سنده بشمول کراچی
16%
بلوچستان
9%
خيبر پختون خواه
5%
فاٹا
3%
گلگت بلتستان
2%
آزاد جموں اور کشمير
:اہليت
  • انٹرميڈيٹ / اے ليول 50فيصد(1100/550) نمبروں کے ساته
  • امتحانی نتيجہ کے منتظر طلبا عارضی داخلہ کے اہل ہيں۔
  • ايف۔اے/ايف ايس سی طلبا پارٹ-1 کے رزلٹ کارڈ کی مصدقہ فوٹوکاپی اور پارٹ – II کی متعلقہ بورڈ کی رولنمبر سلپ لف کريں۔
  • اے ليول(کم از کم تين بنيادی مضامين ، ذيلی مضمون نہ ہو)اور او ليول آٹه مضامين کے ساته بشمول پانچ لازمی مضامين ضروری ہيں
  • او ليول طلبا کے لئے ضروری ہے کہ وه آئی بی سی سی سے جاری کرده ايکويلينس سرٹيفيکيٹ ہمراه اے ليول امتحانی نتيجہ کم از کم دو بنيادی مضامين کے ساته ، فارم کے ساته جمع کروائيں۔
  • امتحانی نتيجہ کا انتظار کرنے والے اے ليول کے طلبا اپنی سٹيٹمنٹ آف انٹری ساته لگائيں۔
  • تمام درخواست دہندگان کو داخلہ سے پہلے لازمی قابليت کا امتحان (داخلہ ٹيسٹ)دينا ہوگا جس کے بعد انٹرويو ہوگا۔
  • ميرٹ لسٹ داخلہ ٹيسٹ اور انٹرويو کی بنياد پر تيار ہوگی اور ابتدائی سال کے پہلے سمسٹرميں پڑهنے والوں کے لئے آويزاں کی جائے گی۔
فيس کا ڈهانچہ اور ديگر واجبات کے بارے ميں اداره ہر سال آگاه کرے گا۔ فيس کی تفصيلی تقسيم اس طرح ہے،
سمسٹر 1
10000
داخلہ / رجسٹريشن فيس
10000
(سکيورٹی ڈپازٹ (قابل واپسی
102،292
پڑهائی کی فيس
1000
(ميڈيکل في( سمسٹر کے لئے
2000
(ديگر(لائبريری اور ورکشاپ فيس
1000
(امتحانی فيس (سمسٹر کے لئے
II, III, IV, V, VI, VII, VIIسمسٹر
102،292
پڑهائی کی فيس
1000
(ميڈيکل في( سمسٹر کے لئے
2000
(ديگر(لائبريری اور ورکشاپ فيس
1000
(امتحانی فيس (سمسٹر کے لئے
٭ مکمل فيس پرلاگو قابل تبديلی ودہولڈنگ ٹيکس وصول کيا جائے حکومت کے قواعد و ضوابط کے مطابق
ہاسٹل اخراجات بشمول سواری
2000
(ہاسٹل سکيورٹی(قابل واپسی
8000
ہاسٹل رہائيشی اخراجات (بغير اے سی)ماہانہ
14000
ہاسٹل رہائيشی اخراجات(بمع اے سی)ماہانہ
4500
ہاسٹل ميس اخراجات ماہانہ
(سواری (روزانہ آنے والے طلبا
5000
سواری اخراجات ماہانہ
ايک سمسٹر کی مکمل فيس کو طلبا کی آسانی کے لئے صرف خاص حالات ميں تين اقساط ميں تقسيم کيا جاسکتا ہے ۔
فيس / واجبات کی ادائيگی کی حتمی ذمہ داری طلبا پر عائد ہوتی ہے۔ اداره طلبا اور ان کے والدين / سرپرست يا کفيل جو ادئيگی کی ضمانت دے رہا ہواسے داخلہ کی تصديق سے پہلے يا کورس کے دوران کسی بهی وقت کوئی اقرار نامہ يا حلف نامہ طلب کرسکتا ہے۔
چالان فارم پر دی گئی تاريخ کے اندر فيس کا ادا کيا جانا ضروری ہے۔ دير سے فيس کی ادائيگی کا جرمانہ 100 روپے روزانہ کی بنياد پر اور زياده سے زياده 5000 روپے ايک سمسٹر ميں الگ سے ہوگا۔ وه طلبا جو مقرره وقت ميں فيس ادا کرنے ميں ناکام رہيں گے انہيں آخری تاريخ کے بعد کمره جماعت ميں بيٹهنے کی اجازت نہيں ہوگی اور نہ ہی وه وسط مدتی امتحان اور آخری امتحان ميں شامل ہو سکيں گے۔ ايسے طلبا کو دوباره رجسٹريشن کروانے کا کہا جاسکتا ہے کہ وه مقرره رجسٹريشن فيس کی ادائيگی کے بعد پی آئی ايف ڈی ميں داخل ہوسکتے ہيں۔
فيس کی واپسی پاليسی
پی آئی ايف ڈی نے ايچ ای سی کی طرف سے جاری سرکلر بمطابق خط نمبر 10-1/ايچ ای سی/اے اينڈ سی/94/2012 بتاريخ 11 ستمبر 2012برائے رجسٹرڈ طلبا "پاکستان کے اعل ٰی تعليمی اداروں ميں قومی سطح پر فيس واپسی پاليسی" کو نافذ کرچکا ہے اورايچ ای سی کی جانب سے جاری نظر ثانی شده پاليسی بمطابق خط نمبر 10-1/ايچ ای سی/اے اينڈ سی/6542/2015 بتاريخ 7 دسمبر 2015 بهی اختيار کی ہوئی ہے۔
شرح فيس پڑهائی
سمسٹر کی ٹائم لائن / ٹرائمسٹر نظام
مکمل ( 100فيصد )فيس واپسی
جماعت کے آغاذ سے سات يوم تک
نصف (50فيصد) فيس واپسی
جماعت کے آغاذ سے آٹه سے پندره ايام کے دوران
کوئی فيس(0فيصد) واپسی نہيں ہے
جماعت کے آغاذ کے سولہ ايام بعد
  • شرح فيس تمام اقسام فيس پر لاگو ہوگی سوائے سکيورٹی اور داخلہ فيس کے
  • ٹائم لائن کی گنتی تسلسل کے ساته ہوگی، اس ميں چهٹی کی دن شامل ہوں گے۔
جماعت کے آغاذ کے سولہ ايام کے بعد اگر کوئی طالب علم کسی مرحلہ پر اپنی پڑهائی چهوڑنا چاہے ، وه صرف سکيورٹی فيس کی واپسی کے لئے درخواست دے سکتا/سکتی ہے۔
وه طلبا جو داخلہ منسوخ ہونے کی بناء پر يا کسی اور وجہ سے ، جماعت کے آغاذ سے پہلے فيس واپسی کے لئے درخواست ديں انہيں مکمل فيس واپسی ہوسکتی ہے بمطابق رسيد۔
يہ اميدواران کی صوابديد پر ہے کہ وه اپنے پہلے سمسٹر کی مکمل فيس مقرره تاريخ سے پہلے ادا کرديں کيونکہ پہلے سمسٹر ميں مالی معاونت فراہم نہيں کی جاتی۔
طلبا اور ان کے والدين مالی مشکلات کا شکار ہوسکتے ہيں۔ اس لئے يہ انتہائی ضروری ہے کہ تعليمی اخراجات کی پيشگی منصوبہ بندی کی جائے۔ ہماری کاوش ہے کہ ہم معياری تعليم تک رسائی مہيا کريں۔ تاہم ادارے کے پاس محدود تعداد ميں وظائف ہيں جو ان طلبا کی مالی معاونت کے لئے ہيں جن کا تعلق کم آمدنی والے طبقوں سے ہے۔
اداره مالی ضرورت ثابت کرنے کی بنياد پر ضرورت مند طلبا کودوسرے سمسٹر کےما بعد مالی معاونت مہيا کرتا ہے۔ تعليم، قابليت اور کهيلوں کی بنياد پر کوئی وظائف نہيں دئے جاتے۔ مالی معاونت صرف ايک سمسٹر کے لئے اور يہ معافی يا رعايت صرف پڑهائی کی فيس پر لاگو ہوگی۔ طالب علم کو باقی تمام فيس اور جرمانے مکمل ادا کرنے ہونگے اور کئی رعايت نہيں برتی جائے گی۔ مالی معاونت خاندانی تعلق کی بنا ء پر چهوٹے بهائی يا بہن کو آدهی فيس کی صورت ميں دی جائے گی۔
درخواست کا طريقہ
جب اعلان کيا جائے تو طلبا اس وقت درخواست ديں۔ درخواست فارم صحيح طريقے سے بهرا جائے اور ضروری دستاويزات جيسے کہ آمدن، اخراجات اور ٹيکس ريٹرن وغيره ساته منسلک کريں۔ مالی معاونت فارمز ہر شعبہ ميں کورس سربراه کے آفس ميں دستياب ہيں۔ مالی معاونت کی درخواست دينے کی آخری تاريخ کا اعلان نوٹس بورڈ پر آويزاں کيا جائے گا۔ دير سے جمع کروائی گئی درخواستيں منظور نہيں کی جائيں گی۔
درخواستوں کا تجزيہ
مالی معاونت کے تمام کيسز کا باضابطہ طور پر بنائی گئی ايک کميٹی تجزيہ کرتی ہے۔ درخواست ميں مہيا کرده معلومات کی روشنی ميں کميٹی طالب علم کی مالی ضرورت کا تجزيہ کرتی ہے۔ نامکمل درخواستيں خارج کردی جاتی ہيں۔
ديگر ذرائع سے مالی بندوبست
لاتعداد بيرونی مالی ذرائع موجود ہيں )گرانٹس اور قرضے( جن تک طالب علم رسائی حاصل کرسکتا ہے۔ ايسی صورت حال ميں اداره ہرممکنہ معاونت کرے گا۔ مکمل معلومات صرف اصل ذرائع سے براه راست ميسر ہيں۔ طالب علم کی اہليت برائے قرض کا مسلہ طالب علم اور متعلقہ ذريعہ کے درميان ہے۔
مالی معاونت کی ادائيگی
اگر درخواست منظور ہوجائے تواکاؤنٹ آفس پڑهائی کی فيس ميں مالی معاونت کو ايڈجسٹ کرليتا ہے۔ طالب علم کو براه راست کوئی رقم ادا نہيں کی جاتی۔
ايچ ای سی وظائف برائے ضرورت مند
تعارف
ہائر ايجوکيشن کميشن کوشاں ہے کہ وظائف کے ذريعے ضرورت مند طلبا کو معياری تعليم تک رسائی دے کر ان کی معاشی اور معاشرتی حالت کو بہتر کيا جائے ۔ حکومت پاکستان بهی طلبا کی مالی دشواريوں کو سمجهتی ہے جو انہيں اعل ٰی تعليم حاصل کرنے ميں رکاوٹ ہيں اور اسی لئے شعبہ تعليم کی بہتری کے لئے ضخيم مالی وسائل مختص کرتی ہے۔
مقاصد
  • قابل طلبا کے لئے مواقع مہيا کرنا جو مالی تنگی کا شکار ہيں اورہر شعبہ کے شريک اداروں/يونيورسٹيوں ميں اعل ٰی تعليم کے اخراجات پورے نہيں کرسکتے۔
  • تعليمی طور پر اہل اور قابل مگر مالی طور پر ضرورت مند پاکستانی طلبا کو مواقع مہيا کرنا کہ وه منتخب شريک پاکستانی يونيورسٹيوں ميں اپنی يونيورسٹی تعليم جاری رکه سکيں خاص طور پرپاکستان کے دور دراز اور ديہاتی علاقوں کے طلبا(فاٹا، کے پی کے، جنوبی پنجاب، بلوچستان، اور شمالی سنده)
اہليت کا معيار
  • مالی اعانت اور وظائف ايچ ای سی سے منظور شده تمام شعبوں کی حکومتی يونيورسٹيز اور ڈگری عطا کرنے والے اداروں ميں انڈر گريجويٹ اور گريجويٹ ليول کے لئے دستياب ہيں۔
  • طلبا کا متعلقہ يونيورسٹی يا ادارے ميں داخلہ پاليسی کے مطابق چار سالہ انڈر گريجويٹ يا دو سالہ ايم اے/ايم ايس سی ميں داخلہ حاصل کر لينا ضروری ہے۔
  • وه طلبا جو پہلے سے ہی متعلقہ ادارے کے طالب علم ہوں اور مالی اعانت کے ضرورت مند ہوں وه بهی اعانت کے لئے درخواست داخل کر سکتے ہيں۔
  • اميدوار کی اہليت کا تعلق ادارے کی وظائف کا فيصلہ کرنے والی کميٹی کے تجزيہ سے ہے۔ اس سلسلے ميں اميدوار کے خاندان کی مالی حيثيت ديکهی جائے گی۔
  • گريجويٹ اور انڈر گريجويٹ طلبا کی تعداد برائے وظا ئف کا فيصلہ متعلقہ يونيورسٹی کرے گی۔ مگر زياده اہميت انڈر گريجويٹ طلبا کو دی جائے گی۔
  • مالی اعانت برائے گريجويٹ اور انڈر گريجويٹ طلبا پروگرام کی تکميل تک جاری رہے گی۔ اگر کوئی طالب علم اس دوران پڑهائی چهوڑديتا ہے تو اس کی جگہ فہرست ميں موجود اگلے طالب علم کو اعانت منتقل کردی جائے گی۔
  • تمام شعبہ جات اس ميں حصہ لے سکتے ہيں مگر منتخب يونيورسٹی اپنی گرانٹ، پروگرام کی لاگت، مختص کی گئی تعداد کو مد نظر رکهتے ہوئے، يہ فيصلہ کرسکتی ہے کہ کس شعبے کو شامل کرنا ہے اور کس کو شامل نہيں کرنا۔
  • ميڈيسن، فارم-ڈی اور ديگر پانچ سالہ پروگرامز ميں يہ اعانت پورے پروگرام کی تکميل تک جاری رہے گی۔
  • مختص کی گئی امداد کو ديکهتے ہوئے يونيورسٹی وظائف کی تعداد کو کم و بيش کرسکتی ہے اس حد تک جس ميں اسکی پڑهائی کی فيس پوری ہوجائے۔
  • پڑهائی کی فيس کے علاوه ہر اعانت لينے والے کوپروگرام کی تکميل تک چه ہزار روپے ماہانہ مشاہره ادا کيا جائے گا۔
نوٹ
مکمل درخواست مالی امداد کے دفتر بهيجيں جہاں آپ داخلہ لينا چا ہتے ہيں۔
پنجاب ايجوکيشن انڈومنٹ فنڈ (پی ای ای ايف)
پنجاب ايجوکيشن انڈومنٹ فنڈ(پی ای ای ايف) گريجويشن ڈگری کورس کے فاؤنڈيشن ائر کی تعليم کےطلبا کو اب تک قابليت اور ضرورت مندی کی بنياد پر دس وظائف دے چکا ہے۔
يہ مالی وسائل درج ذيل معيار پر پورا اترنے والے طلبا کو پيش کش کئے جاتے ہيں۔
  • اميدوار صوبہ پنجاب کا رہائشی ہو۔
  • اميدوار نے اپنے انٹرميڈيٹ کے امتحان ميں ساٹه فيصد )فرسٹ ڈيويژن( نمبر حاصل کئے ہوں اوراميدوار اسی سال انڈر گريجويٹ ليول ڈيزائن ايجوکيشن پروفيشنل ڈگری پروگرام ميں داخلہ حاصل کيا ہو يعنی اميدوار صوبہ پنجاب کے کسی بهی انٹر ميديٹ اور سيکينڈری ايجوکيشن بورڈ يا وفاقی بورڈ آف انٹر ميڈيٹ اينڈ سيکينڈری ايجوکيشن بورڈ سے اسی سال امتحان پاس کيا ہو۔
  • اميدوار نے اوپر بيان کئے گئے امتحان درج ذيل اداروں سے پاس کئے ہوں۔
    a)-حکومتی ادارے (وفاقی حکومتی ادارے جو جغرافيائی طور پر پنجاب کی حدود ميں آتے ہيں اہل ہيں)
    b)- نجی الحاق شده اداره يا
    c)- پرائويٹ اميدوار
  • طالب علم کے والدين کی سالانہ آمدن 360000 روپے سے زياده نہ ہو۔(تين لاکه ساٹه ہزار روپے صرف)
  • طالب علم مالی اعانت کے لئے مقرر اہليت کے معيار پر پورا اترتا ہو۔
طالب علم کا شناختی کارڈ
طالب علم کا شناختی کارڈ اس کا ادارے کی حدود ميں داخل ہونے کا اجازت نامہ ہے۔ طالب علم کو اسے ہر وقت پہنے ہونا چاہيے جب وه کمره جماعت ، لائبريری، سٹوڈيوز، ورکشاپ اور کمپيوٹر روم ميں ہو۔ يہ اس بات کا ثبوت ہوتا ہے کہ وه اس ادارے کا باقاعده طالب علم ہے۔ طلبا ءکو چاہئے کہ اسے ہر وقت اپنے پاس رکهيں اور طلب کرنے پر دکها سکيں۔ اگر کارڈ گم ہوجائے تو مقرره فيس ادا کر کے فوری اسکا متبادل کارڈ حاصل کريں۔
طالب علم کا شناختی کارڈچار سالہ تعليمی مدت کے لئے کارگر ہوتا ہے۔ اور مدت يا کورس کے اختتام پر کورس سربراه کو واپس کيا جانا لازمی ہے تاکہ لائبريری اور ادارے کو جمع شده سيکيورٹی فيس واپس کی جاسکے۔
ضابطہ لباس
تمام طالب علم ادارے کی حدود ميں ضابطہ لباس کی پيروی کريں۔ ضابطہ کی خلاف ورزی کی صورت ميں جرمانہ عائد کيا جاسکتا ہے يا پی آئی ايف ڈی کی حدود سے باہر نکلنے کو کہا جاسکتا ہے۔
خواتين طلبا کے لئے ضابطہ لباس درج ذيل ہے۔
  • گهٹنے تک لمبائی کی قميص / کم يا لمبی آستين ، شلوار اور دوپٹہ/سکارف يا
  • ٹراؤزر/جينز/پينٹس ہمراه گهٹنے تک لمبائی کی شرٹس/ کم يا لمبی آستين اور دوپٹہ/سکارف۔
  • لڑکيوں کو بغير بازووں کے، تنگ ٹی شرٹس، کيپری ، چهوٹی شرٹس کے لباس پہننے کی اجازت نہيں۔
مرد طلبا لازمی طور پر مناسب لباس ميں ہوں۔ چهوٹے ٹراؤزرز، شب خوابی کے لباس اور سليپرز ممنوع ہے۔
Copyright © 2017. All rights reserved by Pakistan Institute of Fashion and Design (PIFD)
Design & Developed by SevenCentric (Pvt.) Ltd